دردِ غمِ فراق کے یہ سخت مرحلے


14-09-2016 | جگرؔمرادآبادی

دردِ غمِ فراق ۔۔۔ کے یہ سخت ۔۔۔ مرحلے

حیراں ہوں میں کہ پھربھی تم اتنے حسیں رہے

 

جا ۔۔۔ اور کوئی ضبط کی ۔۔۔ دنیا تلاش کر

ائے عشق ہم تو اب ترے قابل نہیں رہے




پچھلا صفحہ | اگلا صفحہ



شاعر کا مزید کلام
نہیں جاتی کہاں تک فکرِ انسانی نہیں جاتی
اک رند ہے اور مدحتِ سلطانِ مدینہ
کام آخر جذبۂ بے اختیار آ ہی گیا
کسی صورت نمودِ سوزِ پنہانی نہیں جاتی
ساقی کی ہر نگاہ پہ بل کھا کے پی گیا