دردِ غمِ فراق کے یہ سخت مرحلے


14-09-2016 | جگرؔمرادآبادی

دردِ غمِ فراق ۔۔۔ کے یہ سخت ۔۔۔ مرحلے

حیراں ہوں میں کہ پھربھی تم اتنے حسیں رہے

 

جا ۔۔۔ اور کوئی ضبط کی ۔۔۔ دنیا تلاش کر

ائے عشق ہم تو اب ترے قابل نہیں رہے




پچھلا صفحہ | اگلا صفحہ



شاعر کا مزید کلام
کسی صورت نمودِ سوزِ پنہانی نہیں جاتی
نہ اب مسکرانے کو جی چاہتا ہے
ہزاروں قربتوں پر یوں مرا مہجور ہوجانا
دردِ غمِ فراق کے یہ سخت مرحلے
کبھی شاخ و سبزہ و برگ پر کبھی غنچہ و گل و خار پر