یہ چاند ستارے بھی دیتے ہیں خراج اُن کو


30-10-2016 | کیفؔ عظیم آبادی

یہ چاند ستارے بھی دیتے ہیں خراج اُن کو

بخشی ہے جنہیں تو نے خود اپنی شناسائی

تُو ، نازشِ دنیا ہے ۔۔۔ تُو ، سرورِ عقبیٰ ہے

تیرے ہی لئے ہے سب یہ انجمن آرائی

ائے کیفؔ خدا تجھ کو اس روضہ پہ پہنچادے

کرتے ہیں جہاں آ کر جبریلؑ جبیں سائی

 

کوثر کے چھلکنے کی ائے کیفؔ صدا آئی

پھر تشنہ لبی میری ۔۔ لینے لگی انگڑائی




پچھلا صفحہ | اگلا صفحہ



شاعر کا مزید کلام
یہ چاند ستارے بھی دیتے ہیں خراج اُن کو
چاک گریباں دیکھ کے ہم کو لوگو کیوں حیرانی ہے