ہم لوگ مسلماں ہیں مسلماں ہیں مسلماں

اعجازؔ رحمانی
ہم لوگ مسلماں ہیں مسلماں ہیں مسلماں
حامی ہیں نگہباں ہیں اسلام پہ قرباں
خادم ہیں محمد کے خدا کے ہیں سپاہی
مظلوم کے ہمدرد ہیں ظالم کی تباہی
ہر حال میں ہیں جادۂ اسلام کے راہی
اللہ کی نصرت ہے ہماری ہی نگہباں
ہم لوگ مسلماں ہیں مسلماں ہیں مسلماں
حامی ہیں نگہباں ہیں اسلام پہ قرباں
صدیقؓ کی ہم لوگ صداقت کے امیں ہیں
فاروقؓ کی ہم لوگ عدالت کے امیں ہیں
عثمانؓ کی ہم لوگ سخاوت کے امیں ہیں
حیدرؓ کی طرح دینِ محمد پہ ہیں قرباں
ہم لوگ مسلماں ہیں مسلماں ہیں مسلماں
حامی ہیں نگہباں ہیں اسلام پہ قرباں
طلحہؓ و زبیرؓ ابنِ علیؓ پیشِ نظر ہیں
ہم طارقؒ و خالدؓ کی طرح سینہ سپر ہیں
قاسمؒ کی طرح دشمنِ ایماں سے نڈر ہیں
اسلام کا پرچم لئے آئے سرِ میداں
ہم لوگ مسلماں ہیں مسلماں ہیں مسلماں
حامی ہیں نگہباں ہیں اسلام پہ قرباں
دنیا کا ہر اک دور ہے ہم ہی سے عبارت
تابندہ ہوئی ہم سے ہی پیشانیٔ ملت
ہے خون ہمارا ہی وطن کے لئے زینت
ہم نے ہی بنایا ہے بیاباں کو گلستاں
ہم لوگ مسلماں ہیں مسلماں ہیں مسلماں
حامی ہیں نگہباں ہیں اسلام پہ قرباں
ہم کوہ کے مانند ارادوں میں اٹل ہیں
ہم کارگہِ زیست میں مصروفِ عمل ہیں
اللہ کی تلوار ہیں دشمن کی اجل ہیں
اسلام کی عظمت پہ ہیں سو جان سے قرباں
ہم لوگ مسلماں ہیں مسلماں ہیں مسلماں
حامی ہیں نگہباں ہیں اسلام پہ قرباں
دنیا سے الگ دہر میں انداز ہمارا
ہر حال میں اللہ ہے دم ساز ہمارا
دیکھا ہے زمانے نے یہ اعجازؔ ہمارا
کافر کو بنا دیتے ہیں ہم صاحبِ ایماں
ہم لوگ مسلماں ہیں مسلماں ہیں مسلماں
حامی ہیں نگہباں ہیں اسلام پہ قرباں

پچھلا کلام | اگلا کلام

شاعر کا مزید کلام