کون سود و زیاں کی دنیا میں


06-11-2016 | جونؔ ایلیا

کون سود و زیاں کی دنیا میں

درد غربت کا ساتھ دیتا ہے

 

جب مقابل ہوں عشق اوردولت

حسن ، دولت کا ساتھ دیتا ہے




پچھلا صفحہ | اگلا صفحہ



شاعر کا مزید کلام
وہ جو اپنے مکان چھوڑ گئے
کون سود و زیاں کی دنیا میں
سرِ صحرا حباب بیچے ہیں
ائے کوئے یار تیرے زمانے گزر گئے
ہجر کی آنکھوں سے آنکھیں تو ملاتے جائیے