کیا کہہ کے عندلیب چمن سے گذر گئی


23-10-2016 | امیر اللہ تسلیمؔ

کیا کہہ کے عندلیب چمن سے گذر گئی

کیا سن لیا گُلوں نے کہ رنگت بدل گئی

ایسا کہاں رفیق ، جو دیتا قلق کے ساتھ

اک جان تھی سو وقت پہ وہ بھی نکل گئی




پچھلا صفحہ | اگلا صفحہ



شاعر کا مزید کلام
کیا کہہ کے عندلیب چمن سے گذر گئی
حُسن کا انصاف ہے اہلِ نظر کے سامنے
اچھے اچھے بت کے بندے اب خدا ہونے لگے