کام آئیں شوخیاں نہ ادا کارگر ہوئی


28-04-2016 | استاد قمرؔ جلالوی

کام آئیں شوخیاں ۔۔۔ نہ ادا کارگر ہوئی

جو بات تھی تمہاری ۔۔ وہی بے اثر ہوئی

 

خلوت میں جا کے ہنس دیئے کیا اس سے فائدہ

صحرا میں پھول کھل گیا ۔۔ کس کو خبر ہوئی




پچھلا صفحہ | اگلا صفحہ



شاعر کا مزید کلام
کام آئیں شوخیاں نہ ادا کارگر ہوئی
کبهی کہا نہ کسی سے ترے فسانے کو
نہ آئیں وہ تو کوئی موت کا پیغام آ جائے
پڑھ چکے حسن کی تاریخ کو ہم تیرے بعد
سکوں پسند جو دیوانگی مری ہوتی