ائے کاش پھر مدینہ میں اپنا قیام ہو


27-08-2015 | مولانا مفتی شفیع عثمانی

ائے کاش! پھر مدینہ میں اپنا قیام ہو

دن رات پھر لبوں پہ درود و سلام ہو

پھر ذکرِ لاالہ مرا ، حرزِ جاں رہے

اور وقتِ واپسیں یہی میرا کلام ہو

محرابِ مصطفی میں معراجِ سر نصیب 

پھر سامنے وہ ۔۔۔روضۂ خیر الانام ہو

پھر بھی مواجہہ میں درود و سلام کا

پُرکیف وہ نظارہ ہر خاص و عام ہو

پھر کاش میں مکینِ حرمِ مصطفی بنوں 

فضلِ خدا سے ، روضۂ جنت مقام ہو

 

جس کو وہ خود یہ کہہ دیں کہ میرا غلام ہے

دوزخ کی آگ۔۔۔ اُس پہ یقیناً حرام ہے




پچھلا صفحہ | اگلا صفحہ



شاعر کا مزید کلام
ائے کاش پھر مدینہ میں اپنا قیام ہو