کیسا ہے یہ مذاق مری زندگی کے ساتھ

ماچسؔ لکھنوی
کیسا ہے یہ مذاق مری زندگی کے ساتھ
کیوں اے فلک یہ کھیل مری عاشقی کے ساتھ
جس مولوی کو آ کے پڑھانا تھا میرا عقد
ٹھہرا ہے اُن کا عقد اُسی مولوی کے ساتھ

پچھلا کلام | اگلا کلام

شاعر کا مزید کلام